Labels

Tuesday, 24 January 2017

Ye jo zindagi ki kitab hai

یہ جو زندگی کی کتاب ھے !
یہ کتاب بھی کیا کتاب ھے !

کہیں اک حسیں سا خواب ھے !
کہیں جان لیوا عذاب ھے !

کہیں آنسوؤں کی ھے داستاں !
کہیں شادمانی بے حساب ھے !

کئ چہرے ھیں اس میں چھپے ھوئے !
اک عجیب سا یہ نقاب ھے !

کہیں حسرتوں کا مزار ھے !
کہیں خواھشوں کا سراب ھے !

یہ جو زندگی کی کتاب ھے !
یہ کتاب بھی کیا کتاب ھے !

No comments:

Post a Comment